38

اگر ایلفی ہاتھ پر لگ جائے تو وضو کا حکم ؟

اگر ایلفی ہاتھ پر لگ جائے تو وضو کا حکم ؟

اگر ایلفی ہاتھ پر لگی رہ جائے توچوں کہ اس صورت میں جلد تک پانی نہیں پہنچ پاتا ، اس لیے ایلفی لگی رہنے کی صورت میں وضو نہیں ہوگا ، وضو سے قبل اس کو اتارنا لازم ہے ،

عموماً ایلفی چھوٹ جاتی ہے ، لہٰذا ناخن پر لگی ایلفی کو چھڑانا ضروری ہوگا ، کیوں کہ اس میں زیادہ مشقت نہیں ہے ،

البتہ اگر کھال پر ایلفی لگی ہو اور پوری کوشش کے بعد بھی مکمل طور پر نہ چھوٹے ، اور زیادہ کوشش کے نتیجے میں کھال اترنے یا زخم بننے کا اندیشہ ہو تو جس قدر ہٹ سکے اس کا چھڑانا ضروری ہوگا ،

(آپ کے مسائل اور ان کا حل 3/96)

مزید وضاحت
اگر ہاتھ میں کوئی ایسی چیز لگ جائے جو کھال تک پانی پہنچنے سے مانع ہو تو وضو سے پہلے اسے چھڑانے کی بھربور کوشش کرنی چاہیے ، صورت مسئولہ میں اگر فیوی کوئیک (Feviqiuick) بھی اسی قسم کی چیز ہے جو کھال تک پانی پہنچنے سے مانع ہوتی ہے تو وضو سے پہلے اسے رگڑکر یا صابن وغیرہ کے ذریعہ چھڑانے کی کوشش ضروری ہے ، اگر پوری کوشش کے باوجود نہ چھٹے تو حرج کی وجہ سے معاف ہے اسی حال میں وضو ہوجائے گا ،

ماخوذ : دارالافتاء دارالعلوم دیوبند

فقط واللہ اعلم باالصواب
محمد مستقیم عفااللہ عنه

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں