11

جنابت کی حالت میں جانور ذبح کرنا


سوال
جنابت کی حالت میں جانور ذبح کرنا اور اس ذبیحہ کا کھانا جائز ہے یا نہیں؟

جواب
فقہاء کرام نے جہاں ذبح کرنے کی شرائط کا ذکر فرمایا ہے وہاں ذبح کرنے والے کا جنابت سے پاک ہونا ذکر نہیں فرمایا، معلوم ہوا کہ ذبح کرنے والے کا جنابت سے پاک ہونا ضروری نہیں ہے، لہذا اگر کسی شخص نے حالتِ جنابت میں بھی جانور ذبح کر لیا تو  اس ذبیحہ کا کھانا حلال ہو گا۔

الفقه الإسلامي وأدلته للزحيلي (4/ 2763):

شروط الذابح: مما سبق تعرف شروط الذابح: وهي أن يكون مميزاً عاقلاً، مسلماً أو كتابياً: ذمياً أو حربياً أو من نصارى بني تغلب، قاصداً التذكية، ولو كان مكرهاً على الذبح، ذكراً أو أنثى، طاهراً أو حائضاً أو جنباً، بصيراً أوأعمى، عدلاً أو فاسقاً.

فقط والله أعلم

فتوی نمبر : 144109201660

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں