19

حضرت علی رضی اللہ تعالیٰ عنہ نے مہر کس طرح ادا کیا؟

سوال

حضرت علی نے حق مہر کیسے ادا کیاتھا؟

جواب

حضرت علی رضی اللہ عنہ نے اپنی زرہ بارہ اوقیہ چاندی ( چار سو اسی درہم) میں فروخت کرکے حضرت فاطمہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ کا  مہر ادا فرمایا، اس کے بعد ان کے ہاں رخصتی ہوئی ۔

” عن علي قال: لما تزوجت فاطمة قلت: یا رسول الله! ﷺ ما أبیع؟  فرسي أو درعي؟ قال: بع درعک، فبعتها بثنتی عشرة أوقیةً، فکان ذاک مهر فاطمة”۔ (مسند أبي یعلی الموصلي،  ۱/ ۲۲۴، رقم: ۴۶۶، ط: دارالکتب العلمیة بیروت۔ ومجمع الزوائد،۴/ ۲۸۳، رقم: ۷۴۹۶، ط:  دارالکتب العلمیة بیروت )
” قلت: تزوجني فاطمة، قال: وعندک شيء؟ قلت: فرسي وبدني، قال: أما فرسک فلا بد لک منه، وأما بدنک فبعها، قال: فبعتها بأربع مائة وثمانین فجئت بها”۔ (صحیح ابن حبان، دارالفکر ۶/ ۲۷۵، رقم: ۶۹۵۳، المعجم الکبیر للطبراني، داراحیاء التراث العربي ۲۲/ ۴۰۸، رقم: ۱۰۲۱)فقط واللہ اعلم

فتوی نمبر : 143909200903

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں