عمرہ کے لیے جاتے وقت پہلے مکہ مکرمہ جانا چاہیے یا مدینہ منورہ؟

سوال
عمرہ ادا کرنے کے لیے پہلے مدینہ منورہ جانا چاہیے یا مکہ مکرمہ جانا چاہیے؟ اس کے لیے کیا حکم ہے؟ اگر پہلے مدینہ منورہ جائے تو اس کے لیے کیا حکم ہے؟

جواب
عمرہ کی ادائیگی صرف مکہ مکرمہ میں ہوتی ہے؛ اس لیے ایک مسلمان عمرہ کرکے مدینہ منورہ میں حاضری دے یا پہلے مدینہ منورہ کی زیارت کرے اور پھر عمرہ کرے دونوں ہی باتیں درست ہیں۔ البتہ اگر مدینہ منورہ راستہ میں پڑتا ہو تو روضہ رسول ﷺ کی زیارت کیے بغیر آگے نہیں بڑھنا چاہیے، کیوں کہ یہ قساوت ہے، لیکن اگر مدینہ منورہ راستے میں نہ پڑتا ہوتو اولیٰ یہ ہے کہ پہلے عمرہ کرلے؛ تاکہ گناہوں سے پاک ہوکر پھر دربار نبوی ﷺ میں حاضر ہو۔
فتوی نمبر : 144007200392

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن

Leave a Reply