23

مہرِ فاطمی کی مقدار

سوال: مفتی صاحب ! مہرِ فاطمی کیا ہے اور اس کی مروجہ زمانہ میں کتنی مقدار بنتی ہے؟


جواب: “مہرِ فاطمی” کی مقدار احادیث میں ساڑھے بارہ اوقیہ منقول ہے اور ایک اوقیہ چالیس درہم کا ہوتا ہے، تو اس حساب سے “مہر فاطمی” پانچ سو درہم بنتے ہیں۔ موجودہ دور کے حساب سے اس کی مقدار ایک سو اکتیس تولہ تین ماشہ چاندی بنتی ہے۔ اور آج کل کے مروجہ گرام کے حساب سے 1.5309 کلو گرام چاندی بنتی ہے۔آج مورخہ 2/12/19 کے مطابق کراچی میں ایک تولہ چاندی کی قیمت ایک ہزار روپے ہے، اس اعتبار سے ایک سو اکتیس تولہ تین ماشہ چاندی کی قیمت ایک لاکھ اکتیس ہزار دو سو ستاون (1,31,257) روپے بنتی ہے۔اور مہر کی کم از کم مقدار دس درہم ہے، چاندی کے حساب سے اس کی مقدار 30.618 گرام چاندی اور تولہ کے حساب سے 31.5 ماشہ چاندی بنتی ہے۔

“واللہ تعالٰی اعلم بالصواب

دارالافتاء الاخلاص، کراچی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں