80

کھڑے ہو کر کھانا کھانا کیسا ہے؟۔

کھڑے ہو کر کھانا کھانا کیسا ہے؟۔

الجواب وباللہ التوفیق:

بلا عذر کھڑے ہو کر کھانا کھانا مکروہ ہے، لیکن اگرکسی ایسی جگہ کھانا کھانے کی نوبت آجائے جہاں بیٹھنے کی جگہ ہی نہ ہو، یا جگہ تو ہو لیکن گندگی یا کسی عذر کی وجہ سے بیٹھنا مشکل ہو تو بوجہ مجبوری کھڑے ہو کر کھانا کھانے کی گنجائش ہے، صحیح مسلم میں حضرت انس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ نبی کریم ﷺ نے کھڑے ہو کر پانی پینے کو منع فرمایا ہے، راوی کہتے ہیں کہ : ہم نے حضرت انس رضی اللہ عنہ سے دریافت کیا: کھانا (کا کیا حکم ہے)؟، انہوں نے جواب دیا کہ : وہ تو زیادہ نقصان دہ اور برا ہے۔

صحيح مسلم (6 / 110):

“عن أنس عن النبى صلى الله عليه وسلم أنه نهى أن يشرب الرجل قائماً. قال قتادة: فقلنا: فالأكل؟ فقال: ذاك أشر أو أخبث”

ماخوذ :دار الافتاء جامعۃ العلوم الاسلامیۃ بنوری ٹاؤن

فقط واللہ اعلم بالصواب

الجواب صحیح
مفتی محمد مستقیم عفا اللہ عنہ
٩٨٩١٧٥٧٣٠٥

الجواب صحیح
مفتی محمد آصف قاسمی
٧٠١٥١١٢٢١٩

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں